دنیا کے امیر ترین شہروں میں پہلا نمبر کس شہر کا؟؟ جان کر آپ بھی یقین نہیں کر پائیں گے کہ یہ شہر کیسے ہو سکتا ہے

دنیا کے امیر ترین شہروں میں پہلا نمبر کس شہر کا؟؟ جان کر آپ بھی یقین نہیں کر پائیں گے کہ یہ شہر کیسے ہو سکتا ہے

دنیا کے امیر ترین شہروں میں پہلا نمبر کس شہر کا؟؟ جان کر آپ بھی یقین نہیں کر پائیں گے کہ یہ شہر کیسے ہو سکتا ہے

نیو یارک (مانیٹرنگ ڈیسک) دنیا کے امیر شہروں کی فہرست میں اب ایشیائی شہروں کے نام بھی نمایاں ہورہے ہیں تاہم ان میں ایک بھی پاکستانی شہر شامل نہیں بلکہ جس شہر کی نصف آبادی سڑکوں کے کنارے رہتی اور پائپوں میں زندگی بسر کرتی تھی اب وہ شہر مالدار شمار ہورہا ہے۔

نیو ورلڈ ویلتھ رپورٹ کے مطابق ممبئی کے میڑو ایریانامی پوش علاقے کے رہائشی افراد کی جائیداد اور دیگر اثاثوں کی مالیت 950ارب ڈالر ہے۔ یہی وجہ ہے کہ ممبئی دنیا کے امیر ترین شہروں میں 12ویں نمبر پر آیا ہے۔ ممبئی کے علاوہ ٹوکیو، بیجنگ، شنگھائی، ہانگ کانگ اور سنگاپور بھی دنیا کے 15امیر ترین شہروں کی فہرست میں شامل ہیں جبکہ اس فہرست میں اول درجہ حاصل کرنے کا تاج نیو یارک کے سر جاتا ہے۔

شہریوں کی لمبی قطاریں لگ گئیں ۔۔ 7 یوروپی ممالک نے پاکستانیوں کو شہریت دینے کا اعلان کردیا

پاکستان میں سیاسی صورتحال بدستور خرا ب ہو رہی ہے جس کی وجہ سے شہریوں کو وسرے ممالک کی طرف ہجرت مشکل ہو رہی ہے لیکن کچھ ایسے ممالک ہے جنہوں نے پاکستان کے لئے ویزہ کی شرائط نرم کر دی ہے ۔ اس لئے کوئی بھی پاکستانی اب ممالک میں ویزہ کے لئے اپلائی کر سکتا ہے’

آئس لینڈ
ان ممالک میں سرفہرست یورپ کا ملک آئس لینڈ ہے انہوں نے ان قوانین میں مزید نرمی کی ہے جس کے مطابق کسی بھی شخص کو وہاں کا پاسپورٹ ملتا ہے
اور وہاں رہائش اختیار کرتا ہے ۔ ان قوانین کے مطابق اس ملک میں قانونی طور پر رہنے والا کوئی آدمی اگر 7 سال گزارتا ہے تو اسے وہاں کی قومیت دی جائے گی اور اگر کسی کی وہاں کسی خاتون سے شادی ہوئی ہو تو اس کے لئے مدت 7 سال کے بجائے 3 سال رکھی گئی ہے

فرانس
فرانس کو دنیا میں محبتوں کا شہر کہا جاتا ہے اور اس کا دارلخلافۃ پیرس فیشن انڈسٹری اور سیاحت میں اپنی مثال آپ ہے اس ملک میں بھی اب آپ مستقل شہریت کے لئے درخواست دے سکتے ہیں

برطانیہ
برطانیہ میں داخلہ کے لئے مختلف اقسام کے ویزے جاری کئے جاتے ہیں اکثر لوگ برطا نیہ میں ورک پرمٹ پر آتے ہیں جو کہ ہر بار نیا کیا جاتا ہے اور جب ایک مخصوص مدت پوری ہوجاتی ہے تو پھر مستقل شہریت کے لئے درخواست دی جاسکتی ہے۔

اٹلی
اٹلی ان پاکستانیوں کے لئے جنت ہے جو کہ کسی یورپی ملک میں جلد از جلد شہریت حاصل کرنے کے خواہش مند ہوتے ہیں ۔ اٹلی بھی مختلف طرح کے ویزے جاری کرتا ہے لیکن ان کی مدت اچھی خاصی طویل ہوتی ہے جبکہ ویزہ فیس بھی بہت کم ہے

بیلجئیم
بیلجیم برطانیہ کے بعد دوسرا ملک ہے جس میں پاکستانیوں کی بہت بڑی تعداد آباد ہے ۔ اس کےساتھ یہ ان ممالک میں ہے جس میں دہری شہریت کوئی مسئلہ نہیں سمجھا جاتا

نیدر لینڈ
نیدر لینڈ میں مستقل شہریت ٓحاصل کرنے کے لئے ضروری ہے کہ مذکورہ شخص کچھ سالوں سے وہاں پر رہ رہا ہوں ۔ جسیے طالب علم ، ورکر وغیرہ ایسے لوگوں کو آسانی سے شہریت مل جاتی ہے اس کے ساتھ کچھ شرائط ہیں جن کو پورا کرنا ضروری ہے

کم سے کم 18 سال عمر ہو
کم سے کم 5 سال سے ملک کا رہائشی ہو
جب آپ کی درخواست دی جارہی ہو اس وقت ضروری ہے کہ آپ وہاں ایک قانونی شہری کے حیثییت سے ہو۔

سویزر لینڈ
سویزر لینڈ کو دنیا کے خوبصورت ممالک میں شمار کیا جاتا ہے اور ہر شادی شدہ کی خواہش ہوتی ہے کہ وہاں ایک بار ضرور جایا جائے ۔ اس کی شہریت اور ویزہ کے لئے ایمبیسی میں درخواست دی جاسکتی ہے

اناللہ واناالیہ راجعون امدادی مشن کے دوران فائرنگ ۔۔۔ریحام قتل

اناللہ واناالیہ راجعون امدادی مشن کے دوران فائرنگ ۔۔۔ریحام قتل

اناللہ واناالیہ راجعون امدادی مشن کے دوران فائرنگ ۔۔۔ریحام قتل

اناللہ واناالیہ راجعون امدادی مشن کے دوران فائرنگ ۔۔۔ریحام قتل

اناللہ واناالیہ راجعون امدادی مشن کے دوران فائرنگ ۔۔۔ریحام قتل

یمن میں حوثی ملیشیا نے انسانی حقوق کی معروف کارکن ریہام بدر محمد عبدالواسع ( المعروف ریہام البدر) کو تعز میں ایک امدادی مشن کے دوران فائرنگ کرکے قتل کردیا ہے۔یمنی حکام کے مطابق ریہام البدر تعز کے مشرق میں اپنی ٹیم کے بعض دوسرے ارکان کے ساتھ امدادی سرگرمیوں میں مصروف تھیں۔اس دوران میں ان پر حوثی ملیشیا کے

ایک ماہر نشانچی نے فائرنگ کردی جس سے وہ اور ان کی ٹیم کا ایک اور رکن مومن سعید حمود سالم جاں بحق ہوگئے۔فائرنگ سے ان کی ٹیم کا ایک اور رکن احمد محمد الصامت شدید زخمی ہوگیا ہے۔وہ تعز میں امدادی سرگرمیوں میں مصروف ہونے کےعلاوہ انسانی حقوق کی خلاف ورزیوں کا بھی ریکارڈ اکٹھا کررہی تھی۔انھیں حوثی ملیشیا نے تعز کے مشرق میں واقع علاقے صلہ میں حملے میں نشانہ بنایا ہے۔

یاد رہے کہ مقتولہ ریہام البدر کے بھائی اور انسانی حقوق کے کارکن احمد بدر 22 مارچ 2017ء کو تعز ہی میں ملٹری اسپتال کے سامنے حوثیوں کے حملے میں مارے گئے تھے۔یمن کے وزیراعظم احمد عبید بن دغر نے اپنے ٹویٹر اکاؤنٹ پر ریہام بدر کے اندوہناک قتل پر متاثرہ خاندا ن سے گہرے دکھ اور افسوس کا اظہار کیا ہے۔ انھوں نے لکھا ہے کہ ’’وہ انسانی حقوق کی خلاف ورزیوں کی تحقیقات کرنے والی قومی کمیٹی کی ایک مانیٹرنگ ٹیم کی رکن تھیں ،انھیں حوثیوں نے انسانی حقوق کی خلاف ورزیوں کے مشاہدے کے دوران میں گولی مار کر شہید کردیا ہے۔اللہ تعالیٰ ان کی مغفرت فرمائیں‘‘۔

نوجوان بغیر رکے مسلسل 20 گھنٹے تک ویڈیو گیم کھیلتا رہا، اس کا نتیجہ کیا نکلا؟ جان کر آپ کبھی غلطی سے بھی ایسی حرکت نہ کریں گے

بیجنگ (نیوز ڈیسک) ویڈیو گیمز بہت مزے کی چیز ہیں۔ ایک بار کھیلنا شروع کریں تو دل کرتا ہے کھیلتے ہی چلے جائیں، لیکن یہ بھی یاد رہے کہ دل کے پیچھے لگ کر دیوانہ ہو جانا زندگی کے لئے خطرہ بن سکتا ہے۔ کچھ ایسا ہی بھیانک واقعہ چین میں پیش آیا ہے جہاں گیم کھیلنے کے جنون نے ایک نوجوان کا آدھا دھڑ مفلوج کر ڈالا ہے۔

دی میٹرو کے مطابق یہ افسوسناک واقعہ زی جیانگ صوبے کے شہر جیاشنگ کے ایک نیٹ کیفے میں پیش آیا ہے جہاں اس لڑکے نے 20 گھنٹے مسلسل گیم کھیل کر خود کو معذور کر لیا۔ کیفے کی انتظامیہ نے جب دیکھا کہ نوجوان کے جسم کا نچلا دھڑ بالکل مفلوج ہوگیا تھا تو انہوں نے پولیس کو اطلاع کی۔ سوشل میڈیا پر سامنے آنے والی ویڈیو میں دیکھا جاسکتا ہے کہ ریسکیو اہلکار اس لڑکے کو اُٹھا کر ایمبولینس میں لٹارہے ہیں۔

نیٹ کیفے کی انتظامیہ نے بتایا کہ یہ لڑکا ہفتے کی شام کو گیم کھیلنے آیا تھا اور اگلے 20 گھنٹے تک مسلسل بغیر کسی وقفے کے گیم کھیلتا رہا۔ نیٹ کیفے سٹاف کے ایک رکن نے بتایا کہ جب 20 گھنٹے بعد اس لڑکے نے باتھ روم جانے کے لئے اٹھنے کی کوشش کی تو اسے پتہ چلا کہ وہ اپنے جسم کے نچلے حصے کو حرکت نہیں دے سکتا تھا۔ اس کی حالت کو دیکھ کر ہر کوئی خوف میں مبتلا ہوگیا تھا۔

یہ لڑکا معذور ہو گیا لیکن اس کی بری لت کا اندازہ کیجئے کہ جب اسے ہسپتال لیجایا جارہا تھا تو اس وقت بھی وہ اپنے ایک دوست سے کہہ رہا تھا کہ اس نے گیم ’پاز‘ کی ہوئی ہے اور وہ اسے مکمل کر دے۔ مقامی میڈیا کے مطابق چین میں گیمز کا جنون بے حد عام پایا جاتاہے اور ایک اندازے کے مطابق 56کروڑ سے زائد نوجوان باقاعدگی سے گیمز کھیلتے ہیں۔ نوجوان نسل میں گیمز کے اس جنون کے باعث 2008ءمیں چین وہ پہلا ملک تھا جس نے گیمز کی لت کو ایک بیماری کا درجہ دے کر اس کے خاتمے کے لئے اقدامات شروع کئے، لیکن بدقسمتی سے اس جنون میں تاحال کوئی کمی نظر نہیں آ رہی۔

یورپ کی تباہی،مسلمانوں کا عروج،9/11حملوں کی درست پیش گوئی کرنیوالی بابا وانگا نے 2018ءکے بارے میں کیا پیش گوئی کی تھیں؟ چونکا دینے والے انکشافات‎

بابا وانگا نامی یہ خاتون 31 جنوری 1911ء کو وانڑلیا پاندوا دیمیتروا کے نام سے بلغاریہ کے شہر وینجیلا میں پیدا ہوئی تھیں۔ اس بچی کی پیدائش پر کسی کو اس کے بچنے کی امید نہیں تھی۔ وانگا بچپن سے انتہائی ذہین تھیں جنھیں بچپن سے ہی روحانی علاج سے بھی دلچسپی تھی بارہ سال کی عمر۲تک ایک عام سی زندگی بسر کرنے کے بعد وہ ایک پراسرار بگولے کی زَد میں آ کر گم ہو گئیں اور کئی دنوں کے بعد اپنے خاندان کو ملیں لیکن آنکھوں میں مٹی بھر جانے کی وجہ سے اْن کی بصارت کم ہوتی چلیگئی۔

اس کے بعد ان کی بینائی ہر طرح کے علاج اور کوشش کے باوجود ختم ہو گئی۔بابا وانگا کا انتقال 1996ء میں ہوا لیکن اس سے پہلے ہی وہ 2001ء میں ورلڈ ٹریڈ سینٹر پر حملے اور 2004ء میں اور 2004ء میں سونامی، ایک سیاہ فام امریکی شہری کے امریکی صدر بننے اور 2010ء میں عرب دنیا میں ابھرنے والی انقلابی تحریکوں کے سلسلے ’عرب بہار‘ کی پیشین گوئی کر چکی تھیں۔

2016ء بابا وانگا کے مطابق 2016ء میں براعظم یورپ کے ملکوں کو مسلمان عسکریت پسندوں کے حملوں کا سامنا کرنا پڑے گا، جن کے نتیجے میں یورپ کو بھاری جانی اور مالی نقصان اٹھانا پڑے گا۔ 2018ء چین دنیا کی سب سے بڑی سپر پاور بن جائے گا۔ 2023ء زمین کے مدار میں ہلکی سی تبدیلی آئے گی۔ 2028ء انسان توانائی کا ایک نیا ذریعہ تلاش کر لے گا۔ اناج کی کمی ختم ہونا شروع ہو جائے گی۔ سیارے زہرہ کی جانب ایک انسانی خلائی مشن بھیجا جائے گا۔

2033ء قطبین پر جمی ہوئی برف پگھل جائے گی اور سمندروں میں پانی کی سطح بلند ہو جائے گی۔ 2043ء اس سال مسلمانوں کو براعظم یورپ پر کنٹرول حاصل ہو جائے گا۔ یورپ کے زیادہ تر حصے خلافت کے تحت آ جائیں گے۔ اس کا مرکز روم ہو گا۔ 2046ء انسان اپنی مرضی کے مطابق انسانی اعضاء بنا سکے گا۔ اعضاء کی تبدیلی امراض کے علاج کا ایک اہم ذریعہ بن جائے گا۔ 2066ء ایک مسجد پر حملہ ہونے کے بعد امریکا غیر معمولی ہتھیار استعمال کرے گا۔

اس سے درجہ? حرارت اچانک گر جائے گا 2100ء مصنوعی سورج زمین کے تاریک حصوں کو روشنی دے گا۔ 2111ء انسان اور روبوٹ کو ملا کر سائیبورگ کے نام سے نئی مخلوق وجود میں لائی جائے گی۔ 2154ء جانور ارتقا کے عمل سے گزرتے ہوئے نصف انسان بن جائیں گے۔ 2170ء زمین کو بے مثال خشک سالی کا سامنا کرنا پڑے گا۔

2195ء انسان پانی کے اندر رہائشی بستیاں بنا لے گا۔ ان بستیوں میں توانائی اور خوراک کی فراہمی کے ویسے ہی انتظامات ہوں گے، جیسے زمین پر ہوں گے۔ 2196ء ایشیا اور یورپ میں رہنے والوں کے ملنے سے انسان کی ایک نئی نسل وجود میں آئے گی۔ 2201ء سورج پر تابکاری کی سرگرمیاں سست پڑ جائیں گی اور درجہ? حرارت گرنے لگے گا۔ 2288ء ٹائم ٹریول ممکن ہو جائے گا۔ دوسرے سیاروں سے تعلق بنیں گے۔ 2480ء دو مصنوعی سورج آپس میں ٹکرا جائیں گے۔ زمین پر تاریکی چھا جائے گی۔ 3005ء مریخ پر جنگ ہو گی۔

’’توبہ استغفراللہ ‘‘، 12سال بعد سعود ی عرب دنیاکے نقشے سے مٹ جائے گا،قطری صدرکے ٹیلی فونک ریکارڈنگ ،کیاکیاسازشیں ہوتی رہیں ؟حیران کن انکشاف‎

خلیجی ریاست قطر کی جانب سے سعودی عرب کے خلاف سازشیں نئی نہیں بلکہ ان کی تاریخ کئی برسوں پر محیط ہے.عرب ٹی وی کی ایک رپورٹ کے مطابق قطر کے سابق امیر مملکت اور لیبیا کے سابق مقتول مرد آہن کرنل معمر قذافی نے مل کر سعودی عرب کے خلاف سازش تیار کی تھی. سعودی عرب کے خلاف قطر اور سابق لیبی رجیم کے مبینہ گٹھ جوڑ کی خفیہ ریکارڈنگ ماضی میں سامنے آتی رہی ہے.

یہ ریکارڈنگ اس بات کا بین ثبوت ہے کہ سابق قطری حکومت اور لیبیا کے کرنل معمر قذافی سعودی عرب کے خلاف سازشوں تانے بانے تیار کرتے رہے ہیں.قطر اور سعودی عرب کے درمیان پیدا ہونے والی کشیدگی کے بعد سماجی کارکنوں نے ماضی میں سامنے لائی گئی دو صوتی ریکارڈنگ دوبارہ سامنے لائی ہے.

ان ریکارڈنگمیں سابق امیر قطر حمد بن خلیفہ، ان کے وزیراعظم اور وزیرخارجہ حمد بن جاسم لیبیا کے کرنل معمر قذافی کے ساتھ مل کر سعودی شاہی خاندان کے خلاف نا مناسب الفاظ استعمال کرتے رہے ہیں.یہ دونوں صوتی ریکارڈ 2014ءکو سامنے آئیں.

اغلب یہ ہے کہ یہ دونوں ریکارڈنگ سنہ 2003ءکی ہیں. ان صوتی ریکارڈنگ میں سابق امیر قطر اور نائب وزیراعظم سعودی عرب کی تقسیم کے لیے بدامنی کو ہوا دینے کی منصوبہ بندی کرتے سنائی دیتے ہیں.حمد بن جاسم کہتے ہیں کہ بارہ سال بعد سعودی عرب دنیا کے نقشے سے مٹ چکا ہوگا اور اس کی جگہ چھوٹی چھوٹی ریاستیں وجود میں آئیں گی.

سابق امیر قطر اپنے ایک بیان میں کہتے ہیں کہ سعودی عرب میں کشیدگی کا سب سے بڑا محرک قطر ہے.ان کا کہنا ہے کہ سعودی شاہی نظام چند دنوں کا مہمان ہے اور بالتاکید وہ بہت جلد ختم ہوجائے گا. ان کا کہنا تھا کہ اگر امریکی عراق میں کامیاب ہوگئے

تو ان کا اگلا ہدف سعودی عرب ہوگا.حمد خلیفہ کا کہنا تھا کہ اردن اور مصر اپنا وقار کھوہ چکے ہیںاور دونوں اپنے وجود کو بقرار رکھنے کے لیے سعودی عرب کے ساتھ کھڑے ہیں. انہوں نے انکشاف کیا کہ قطری حکومت سعودی عرب کے خلاف پروپیگنڈہ کرنے کے لیے ٹی وی چینلوں کو فنڈز فراہم کررہی ہے.

دبئی میں بیروزگار آدمی نے اپنی بیوی کی گاڑی دیوار میں دے ماری، پھر پولیس والا پکڑنے گیا تو اس کے ساتھ کیا کیا؟ جان کر آپ کو بھی ہنسی آجائے گی

دبئی سٹی(مانیٹرنگ ڈیسک)سچ ہی کہتے ہیں کہ نشہ ایک ایسی لعنت ہے جو انسان کو ذلت و رسوائی سے ضرور دوچار کرتی ہے، بلکہ یوں کہنا چاہئیے کہ اسے انسان سے حیوان بنا دیتی ہے۔ نشے کے باعث حیوان بننے والے ایک ایسے ہی شخص کی مثال دبئی میں سامنے آئی جہاں ایک نشئی نے ناصرف اپنی بیوی کی گاڑی تباہ کر ڈالی بلکہ جب پولیس اسے گرفتار کرنے آئی تو ایک اہلکار کو بھی کاٹ کھایا۔

گلف نیوز کے مطابق اس 31 سالہ نشئی کا تعلق افریقی ملک کومروس آئی لینڈ سے ہے۔ پولیس کا کہنا ہے کہ اس نے نشے میں دھت ہو کر اپنی بیوی کی گاڑی دیوار سے ٹکرا کر برباد کر دی اور گھر کے مرکزی ہال میں لگے فانوس بھی تباہ کر ڈالے۔

جب پولیس اسے گرفتار کرنے پہنچی تو وہ نشے میں دھت تھا اور اس کے کمرے کی تلاشی لینے پر نشہ آور ادویات بھی برآمد ہوئیں۔ جب ایک پولیس اہلکار نے اسے ہتھکڑی لگا کر گاڑی میں بٹھانے کی کوشش کررہا تھا تو اس نے اہلکار کو اس زور سے کاٹا کہ بیچارہ درد کے باعث چیخنے لگا۔ دوسرے اہلکاروں نے فوری مداخلت کر کے اپنے ساتھی کو اس درندے کی گرفت سے آزادی دلوائی۔

پولیس کا کہنا ہے کہ اس شخص نے میتھا مفیٹا مین اور ایمفیٹا مین نامی نشہ آور گولیاں کھارکھی تھیں جس کے باعث وہ اپنے ہوش و حواس میں نہیں تھا۔ جب اسے عدالت میں پیش کیا گیا تو اس نے پولیس اہلکار کو کاٹنے کے الزامات کو ماننے سے انکار کردیا اور جج سے کہنے لگا کہ اس کے ساتھ رعایت کی جائے کیونکہ اس کا بیٹا تھیلیسیمیا کے مرض میں مبتلا ہے۔ مقدمے کی کاروائی جاری ہے اور اس نشئی کی سزا کا فیصلہ 11 فروری کو متوقع ہے۔

دس سال قبل گم ہونے والی ــ’کتیا ‘ کےگھر واپس آنے پر مالکن نے کیا کیا؟

اوپالو: پینسلوینیا میں مقیم خاندان کی “ایبی” نامی پالتو کتیادس سال بعد گھر لوٹ آئی ۔تفصیلات کے مطابق ڈیبرا شیورویلڈ کی کتیا “ایبی “(Abby) دس سال پہلے گھر سے غائب ہو گئی تھی ۔ انہوں نے ایبی کی بڑی تلاش کی مگر وہ اسے ڈھونڈنے میں ناکام رہے ۔ وائلڈ لائف ریسکیو ذرائع نے بھی اس کی تلاش کی مگر ہر طرف سے ناکامی ہی ملی ۔ڈیبرا شیورویلڈ کا مزید

کہناتھا کہ انہوں نے اس کے ساتھ مائیکرو چپ بھی نصب کی تھی تاکہ گم ہونے کی صورت میں اسے تلاش کیا جاسکے مگر چپ ہونے کے باوجود وہ اس کو ٹریک نہ کر سکے ۔چپ سے ٹریک نہ ہونے کے بعد انہوں نے آخر کار اس کی تلاش ختم کر دی ۔ تاہم گزشتہ روز گھر سے دس میل دور اس کی چپ کے سگنلز آنے شروع ہو گئے ۔

سگنلز ملتے ہی مالکن نے مقامی جانوروں کے تحٖفظ کرنے والے محکمے سے رجوع کیا جس نے تھوڑی ہی دیر بعد ایبی کو تلاش کر لیا ۔ایبی کی مالکن مس شیورویلڈ کا کہناہے کہ” اس کی کتیا موت کے منہ سے واپس سے آئی ہے “۔ کتیا ایبی دیکھنے میں بالکل صحت مند دکھائی دے رہی ہے ۔

تاہم اس کے دس سال تک کہ ٹھکانے کا پتہ نہیں چلا سکا۔مس شیورویلڈ نے ایبی کی واپسی کے اپنے تمام رشتہ داروں کو دعوت دینے کا پروگرام بنا یا ہے اور ان کا کہناہے کہ وہ ایبی کو واپسی کی خؤشی میں خوش آمدید کہیں گے ۔

’ایک فیس بک پوسٹ نے میری زندگی بچالی، اسے دیکھ کر میں نے اپنا جسم چیک کیا تو۔۔۔‘ بال بال بچ جانے والی خاتون نے وہ بات بتادی جو ہر لڑکی کو ضرور معلوم ہونی چاہیے

لندن(نیوز ڈیسک) بریسٹ کینسر خواتین میں سب سے عام پایا جانے والا کینسر ہے جس کے باعث ہر سال دنیا بھر میں لاکھوں اموات ہوتی ہیں۔ اس موذی بیماری سے بچنے کے لئے ڈاکٹر خواتین کو مشورہ دیتے ہیں کہ وہ وقتاً فوقتاً اپنے جسم کا خود بھی معائنہ کرتی رہیں تا کہ چھاتی میں کسی گلٹی کی موجودگی کا شبہ ہو تو اس کا بروقت علاج کروایا جا سکے۔ باقاعدہ معائنے سے عموماً خواتین بیماری کے ابتدائی آثار کا اندازہ لگا لیتی ہیں لیکن ضروری نہیں کہ روایتی معائنے کا طریقہ پوری طرح کارگر ثابت ہو رہا ہو، جیسا کہ اس خاتون نے انکشاف کیا ہے۔

میل آن لائن کے مطابق 51 سالہ جین ڈینڈی کا کہنا ہے کہ وہ آج زندہ ہیں تو اس کی وجہ سوشل میڈیا صارف ہیلی براﺅننگ کی جانب سے فیس بک پر شیئر کی گئی ایک پوسٹ ہے جس میں انہوں نے چھاتی کے کینسر کا پتہ چلانے کے متبادل طریقے کے بارے میں بتایا تھا۔ ہیلی براﺅننگ نے اپنی فیس بک پوسٹ میں بتایا تھا کہ وہ ڈاکٹروں کے بتائے گئے طریقے کے مطابق کھڑے ہوکر چھاتی کی گلٹی کا معائنہ کرتی تھیں لیکن ایک بار جب وہ لیٹی ہوئی تھیں تو انہوں نے چھاتی کا معائنہ کیا اور انہیں یہ جان کر حیرانی ہوئی کہ اس میں ایک ایسی گلٹی موجود تھی جس کا انہیں پہلے کبھی پتا نہیں چل سکا تھا۔

انہوں نے گزشتہ سال فروری میں اس بات کا انکشاف اپنی فیس بک پوسٹ میں کیا اور دیکھتے ہی دیکھتے ان کی یہ پوسٹ وائرل ہوگئی اور دنیا بھر میں لاکھوں خواتین نے اسے دیکھا۔ جین کا کہنا ہے کہ انہوں نے جس روز پوسٹ دیکھی تو اسی روز ہیلی کے بتائے گئے طریقے کے مطابق معائنہ کیا اور انہیں اپنی دائیں چھاتی میں ایک گلٹی محسوس ہوئی۔ وہ بھی اس سے پہلے روایتی طریقے کے مطابق چھاتی کا معائنہ کرتی رہی تھیں۔ جب انہوں نے ڈاکٹر سے رابطہ کیا تو پتہ چلا کہ وہ چھاتی کے کینسر میں مبتلا ہوچکی تھیں۔

جین کی خوش قسمتی تھی کہ کینسر کی بروقت تشخیص ہونے پر ان کا علاج شروع ہوا اور اب تازہ ترین ٹیسٹ کے بعد انہیں بتایاگیا ہے کہ ان کے جسم سے کینسر کی رسولی ختم ہوچکی ہے۔ انہوں نے اس موقع پر خوشی کا اظہار کرتے ہوئے کہا ”یہ ہیلی براﺅننگ کی فیس بک پوسٹ تھی جس نے میری جان بچائی، یہ محض اتفاق تھا کہ میری نظر اس پوسٹ پر پڑگئی۔ میں عمر بھر ہیلی براﺅننگ کی شکر گزار رہوں گی۔ مجھے امید ہے کہ بہت سی اور خواتین نے بھی ان کی پوسٹ سے فائدہ اٹھایا ہوگا۔“

”آپ مجھ سے شادی کر لو“ پاکستانی نوجوان کی اس خاتون پائلٹ کو پیشکش، آگے سے جواب کیا ملا؟ جان کر آپ ہنس ہنس کر لوٹ پوٹ ہو جائیں گے

 کسی لڑکی پر دل ہار جانا اور پھر اسے شادی کی پیشکش کر دینا کوئی غیر معمولی بات نہیں ہے لیکن بعض اوقات انسان کیساتھ کچھ ایسے ناقابل فراموش واقعات پیش آ جاتے ہیں کہ زندگی بھر نہیں بھولے جا سکتے۔

ایسا ہی کچھ پاکستانی لڑکے کیساتھ بھی ہوا جو ایک خاتون پائلٹ پر دل ہار بیٹھا اور پھر شادی کی پیشکش بھی کر ڈالی لیکن پھر اس کیساتھ کچھ ایسا ہو گیا جو وہ ساری زندگی نہیں بھول پائے گا اور تفصیلات جان کر یقینا آپ بھی ہنسی سے لوٹ پوٹ ہو جائیں گے۔

مذکورہ ؒخاتون پائلٹ نے انسٹاگرام پر اپنی ایک تصویر شیئر کرتے ہوئے لکھا ”جہاز پر خوش آمدید۔۔۔ بعض اوقات لوگ شکایت کرتے ہیں کہ ہم وعدے کے مطابق منزل پر نہیں پہنچ سکے۔۔۔ پہلی بات تو یہ کہ ہم پہنچنے کے ممکنہ وقت کے بارے میں اعلان کرتے ہیں، جو ہم اپنے فلائٹ کمپیوٹر پر پڑھتے ہیں اور جو ہمارے لئے مختص کئے گئے رن وے کے حساب سے ہوتا ہے۔

آمد بھی بدل جاتی ہے، رن وے بھی تبدیل ہو جاتا ہے، اے ٹی سی شارٹ کٹس بھی دے سکتی ہے یا پھر دور سے گھوم کر آنے کا بھی کہا جا سکتا ہے اور موسم بھی اپنا کردار ادا کر رہا ہوتا ہے۔ صرف ایک چیز ایسی ہے جس بارے میں آپ یقین کر سکتے ہیں کہ ہم بھی جلدی زمین پر اترنا پسند کرتے ہیں، جلد لینڈ ہونے کا مطلب ہے کہ جلد گھر جانا یا پھر کھانے کیلئے زیادہ وقت مل جانا۔۔۔“

ہمارے ہاں یہ سوچنا کہ جس لڑکی کو وہ چاہتے ہیں وہ بھی ان کے انتظار میں پاگل ہو رہی ہو گی ”ٹھرک“ کہلاتا ہے جس کے باعث بہت سے پریشانیاں پیدا ہوتی ہیں۔ اب ”ٹھرک“ سے بھی آگے کا ’لیول‘ اس وقت نظر آیا جب ایک پاکستانی شخص نے دل کے ہاتھوں مجبور ہو کر سیدھا شادی کی پیشکش کر ڈالی جو بالکل بھی کام نہ آئی بلکہ یہ انکشاف ہوا کہ وہ پیاری سی پائلٹ پہلے سے ہی شادی شدہ ہے جس کا شوہر اپنی اہلیہ کو شادی کی پیشکش کرنے والے پاکستانی کو جواب دینے بھی پہنچ گیا۔

ساحر خان نامی صارف نے پیار میں ڈوبے دل کیساتھ لکھا ”کیا تم مجھ سے شادی کرو گی؟ میں وعدہ کرتا ہوں کہ مرتے دم تک تمہیں اکیلا نہیں چھوڑوں گا اور یہ وعدہ بھی کرتا ہوں کہ مرتے دم تک تمہیں خوش رکھوں گا۔۔۔ میں تمہیں خوش رکھنے کیلئے سخت محنت کروں گا اور پیسے کماﺅں گا، بس مجھ سے شادی کر لو، مجھ سے شادی کر لو۔۔۔ اس دنیا میں میرے لئے صرف تم ہو اس لئے مجھ سے شادی کر لو۔“

اس کمنٹ پر پائلٹ لڑکی نے تو جواب نہ دیا البتہ ”ائیر 907نامی“ صارف نے مذکورہ لڑکے کو مخاطب کرتے ہوئے لکھا ”تمہارا پیغام بہت متاثر کن ہے“

ساحر خان بھی خوش ہو گیا کہ چلو کسی نے تو اس کے جذبات کی قدر کی ہے اور اس کیساتھ ہی مذکورہ لڑکے سے مدد کرنے کا بھی کہہ دیا اور لکھا ”شکریہ اور ہاں میں واقعی اس سے شادی کرنا چاہتا ہوں، کیا تم میری مدد کر سکتے ہو؟“

یہ وہ لمحہ تھا جب وہ پائلٹ لڑکی میدان میں آئی اور ایسا دھماکے دار انکشاف کیا کہ پاکستانی کے تمام ارمان ایک ہی جھٹکے میں کرچی کرچی ہو گئے۔ پائلٹ لڑکی نے لکھا ”ساحر خان۔۔۔ ٹھیک ہے ، وہ تمہاری مدد کرے گا۔ ائیر 1907 میرا شوہر ہے اور یہ بہت مزاحیہ بات ہے“

اپنی بات کو سچ ثابت کرنے کیلئے پائلٹ لڑکی نے اپنے شوہر کو ٹیگ بھی کیا تاکہ وہ اس کے بارے میں تصدیق کر لے لیکن آخر وہ بھی پاکستانی ہے اور اگر آپ سمجھتے ہیں کہ کہانی یہاں ہی ختم ہو گئی ہے تو آپ غلط ہیں کیونکہ ہمت ہارنا پاکستانیوں نے سیکھا ہی نہیں ہے۔ پہلے تو اس نے بڑے ادب و احترام کیساتھ معافی طلب کی لیکن اپنے جذبات پر قابو نہ رکھ سکا اور کچھ دیر بعد اس سے پوچھ ہی لیا کہ ”کیا تمہاری کوئی بہن ہے؟“

ساحر خان نے پائلٹ لڑکی کے شوہر کو مخاطب کرتے ہوئے لکھا ”اوہ میرے خدا۔۔۔ مجھے معاف کر دیں اور میں بس اتنا ہی کہوں گا کہ آپ بہت زیادہ خوش قسمت ہو“

کچھ دیر بعد اس کا دوسرا پیغام سامنے آیا جس میں وہ پائلٹ لڑکی سے پوچھ رہا تھا کہ ” آپ کی کوئی بہن ہے؟؟؟؟“

یہ معاملہ دیگر پاکستانی صارفین کی نظر میں آیا تو قہقہوں کا طوفان آ گیا اور پھر وہی کچھ ہوا جو سوشل میڈیا پر ہوتا ہے جبکہ ساحر خان نے فوراً اپنا یوزر نیم بدلنے میں غنیمت جانی۔

ایک صارف نے لکھا ”ساحر خان نے اپنا یوزر نیم تبدیل کر لیا ہے اور نیا یوزر نیم ہے ‘Busy’۔“

مریم نور نے لکھا ”میں تو یہاں لیجنڈ ساحر خان کیلئے آئی ہوں، بھائی تم کدھر ہو؟“

جوواﺅ نامی صارف نے ساحر سے ہی پوچھ لیا کہ ”کیا تم مجھ سے شادی کرو گی؟“

سید بلال احمد نے لکھا ”ساحر شادی کر لو، اب تو یہ لوگوں کا مطالبہ بن گیا ہے“

جے پی نامی صارف نے لکھا ”آگے بڑھو ساحر خان! ہمیں تم پر یقین ہے“

88_guyنامی صارف نے لکھا ”میں یہ مزاحیہ کمنٹس کہاں ڈھونڈ سکتا ہوں؟“

ڈینیل نامی صارف نے لکھا ”یہ ساحر نامی لڑکا کہاں ہے میں نے جس کے بارے میں سنا ہے؟“

زینوبیا نامی صارف نے لکھا ”میرے ہم وطن لڑکے ساحر خان کیلئے دلہن ڈھونڈنے کیلئے پٹیشن“