پاکستان کا ایسا گائوں جو جہاں 1937سے آج تک کوئی جرم نہیں ہوا ۔۔ چھوٹی سے چھوٹی دوکان کا مالک بھی کس قدر تعلیم یافتہ ہے اور گائوں کا نام کیا ہے ؟

لاہور(مانیترنگ ڈیسک)پاکستان میں 1937میں قائم ہونے والے رسول پور قصبے نے پورے پاکستانیوں کے لئے ایسی مثال قائم کر دی جسکی مثال کہیں نہیں ملتی اس علاقے کی سب سے بڑی خاصیت یہ ہے کہ یہ علاقہ ہر قسم کے جرائم سے پاک ہے ۔

تفصیلات کے مطابق قصبے کے رہائشیوں نے اس علاقے کو دوسروں کے لئے ماڈل بنا دیا ہے اس گاؤں کے بیشتر افراد تعلیم یا فتہ ہیں جو دنیا کے مختلف علاقوں میں اپنی خدمات کے فرائض سر انجام دیتے ہیں اور اس گاؤں کی دوکانوں پر پان اور سگریٹ کا نام و نشان تک نہیں ملے گا اور چھوٹی سے چھوٹی دوکان پر بھی تعلیم یافتہ شخص بیٹھا ہوا ہے ۔

گاؤں کے رہائشیوں کا کہنا ہے کہ اس گاؤں کے کسی افراد پر بھی 50سال سے کوئی مقدمہ درج نہیں ہوا کیونکہ جہاں پر جرائم کی شرح صفر ہے اور قتل و غاری ،زیادتی جیسے واقعا ت کا تو اس علاقے میں تصور بھی نہیں کیا جاتا ،چھوٹے مسائل کو لوگ باہم اشتراک داری سے حل کر لیتے ہیں اور ایک دوسرے کی خاطر قربانی دے کر مثال بننا چاہتے ہیں ۔